صفحات

بدھ, اکتوبر 28, 2009

تنہا شخص

آج شور ایک شخص کے وجہ سے بہت اداس ہے۔ اُس کی حال پرافسوس کرنےکو دل چاہ رہا ہے۔ وہ شخص کا وقت جب اچھا تھا تو اُسے لوگوں کی محفل سے فرصت نہیں تھی۔ ہر جگہ اُس شخص کا ذکر، ہرایک کی زبان پر اُس کا نام ۔ آج جب اُس شخص کے پاس کچھ نہیں اور اُس کا پاس سب کچھ ختم ہوچکا ہے۔ تو لوگوں نے اُس کے پاس آنا چھوڑ دیا ہے۔ آج وہ بلکل تنہا ہے۔ شور کو اُس کا حال دیکھ کر بہت دکھ ہورہا ہے۔ آج وہ تنہا بیٹھ کر اپنے اچھے دونوں کو یاد کررہا ہے۔
عروج کا سفر بہت اچھا اور لاجواب ہوتا ہے جیسے جیسے یہ سفر جارہی رہتا ہے۔ انسان کا قد اونچا ہوتا جاتا ہے۔ لیکن جونہی یہ سفرکی زوال کی جانب شروع ہوتا ہے ۔ انسان کی جان نکال دیتا ہے۔

کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں