صفحات

جمعرات, اکتوبر 29, 2009

حالات، خیالات

آج رسالے میں ایک دلچسپ جملے پڑھا۔
کسی کے خیالات بدلنا چاہتے ہو تو اُس کے حالات بدلوں۔
کتنا گہرا جملہ ہے۔ اگر کسی انسان کے حالات نہیں بدلیں گے۔ تو وہ بے چارہ اپنے خیالات کیسے تبدیل کرے گا۔ اُس کے خیالات کا سارا دارو مدار اُس کے حالات پر ہے۔ اگر کوئی بھوکا ہے تو اُس کی سوچ روٹی پر اٹکا ہوا ہے۔ اُسے کوئی سیاست ، مذہب ، عشق و محبت، کی لاکھ خوبیاں بتلائے۔ اُس کے لئے سب بے کار ، اُس کا دماغ تب سوچنا شروع کردے گا۔ جب اُس کا بیٹ بھرا ہوگا۔

کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں