صفحات

منگل, اپریل 5, 2011

har

ہار ہار ہوتا ہے۔ جس سے ملے قبول کرو۔ یہ مت سوچو کہ یہ پھولوں کا نہیں ہے۔ بلکہ شکر مناؤ کہ یہ جوتوں کا نہیں ہے۔ پھولوں کا ہار تو تم ویسے بھی خوشی خوشی قبول کرلو گے مگر جوتوں کا ہار تمہیں پوچھ کر نہیں پہنایا جاتا۔اور اگر ہار سے سبق لے اگلے بار اتنی محنت کی جائے کہ ہار سے بچا جائے تو تمھاری بہت بڑی کامیابی ہے۔ ویسے بھی کسی نے کہا تھا کہ ہار کے جیتنے والے کو سٹہ باز کہتے ہیں۔

کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں